ارضِ پاک نیوز نیٹ ورک

Arz-e-Pakistan News Network

Language:

Search

"  لڑکیاں صرف ماں کی کوکھ یا پھر قبر میں محفوظ ہیں" طالبہ نے خودکشی کر لی.    "میں ناگن، تو سپیرا " پوسٹ سوشل میڈیا پر وائرل.    "منی ہائسٹ "(Money Heist )کاآخری حصہ پاکستان سمیت دنیا بھر میں آج ریلیز کیا جائے گا.    NA-133 کا ضمنی انتخاب.    NA-133 ضمنی انتخاب.    NCA میں "دی سندھو پراجیکٹ اینگما آف روٹس " کے عنوان سے فن پاروں کی نمائش.    KIPS-CSS کی جانب سے CSSمیں کامیاب امیدواروں کے اعزاز میں عشائیہ.    NCA میں ٹریڈیشنل آرٹ کورسز ورکشاپ کی اختتامی تقریب.    NA-75 الیکشن کمیشن کی رپورٹ پر ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان کا ردعمل.    NA-133 ضمنی انتخاب : جمشید اقبال چیمہ کی اپیلوں پر الیکشن ٹربیونل کا فیصلہ جاری.    UAE گولڈن جوبلی: گلوبل ولیج تصویری مقابلہ درہم 50,000 تک جیتنے کا موقع.    IMFکے ساتھ معاملات طے پا گئے ، معاہدہ اسی ہفتے ہو گا، شوکت ترین.    UET لاہور انڈرگریجویٹ داخلہ فارم جمع کرانے کی آخری تاریخ.    Major progress in Lahore Police Anti-Drug Campaign.    "میرا ڈونا بلیسڈ ڈریم "کا پہلا ٹریلر جاری.   

ڈاکٹر نے دوران آپریشن ایسا کام کر ڈالا کہ لائسنس منسوخ ہو گیا

مسرت ثمینہ
14 Jan, 2022

14 جنوری ، 2022

مسرت ثمینہ
14 Jan, 2022

14 جنوری ، 2022

ڈاکٹر نے دوران آپریشن ایسا کام کر ڈالا کہ لائسنس منسوخ ہو گیا

post-title

دوران آپریشن سائمن نے  اپنے علاج کو برینڈ بنانے کی کوشش کی جس کی وجہ سے ان کا لائسنس منسوخ کر دیا گیا۔
غیرملکی میڈیا رپورٹس کے مطابق برطانوی سرجن سائمن بریم ہالاس پر الزام تھاکہ انہوں  نے2013 میں آپریشن کے دوران دو مریضوں کے جگر پر اپنا نام  یا نام کے الفاظ بطور آٹوگراف لکھے تھے۔
تفصیلات کے مطابق تحقیقات کے دوران سائمن نے اعتراف کیا کہ انہوں نے 2013 میں ایک خصوصی آرگن بیم مشین سے دو مریضوں کے جگر پر دستخط کیے تھے جبکہ یہ واقعہ برمنگھم کے کوئین الزبتھ اسپتال میں پیش آیا، جہاں سائمن نے  اپنے علاج کو برینڈ بنانے کی کوشش کی۔
رپورٹس کے مطابق معروف سرجن کا لائسنس دوران آپریشن مریضوں کے جگر پر آٹوگراف دینے  کی وجہ سے  منسوخ کردیا گیاان کا مقدمہ کچھ عرصے سے زیرِ التوا تھا تاہم  اب برطانیہ میں میڈیکل پریکٹیشنرز ٹریبونل سروس  نے فیصلہ سناتے ہوئے کہا ہے کہ سرجن سائمن کا یہ عمل طبی غفلت اور خود غرضی کی عکاسی کرتا ہے۔ 
اطلاعات ہیں کہ سرجن سائمن برام ہال کا نام میڈیکل رجسٹر سے بھی نکال دیا گیا ہے جس کے بعد وہ مزید کام نہیں کر سکتےاس کے علاوہ مقدمے میں سائمن پر یہ بھی الزام لگایا گیا کہ ان کی وجہ سے ڈاکٹروں پر عوام کا اعتماد ختم ہوا۔
واضح رہے کہ غیر ملکی میڈیا کے مطابق دسمبر 2017 میں سائمن نے کام کے دوران مریضوں پر دو بار حملہ کرنے کا اعتراف بھی کیا جس کے بعد ان پر 10 ہزارپاؤنڈز کا جرمانہ عائد کیا گیا تھا جبکہ اس کے بعد انہیں 2020 میں 5 ماہ کام نہ کرنے کی سزا بھی سنائی گئی تھی۔
علاوہ ازیں  میڈیکل پریکٹیشنرز ٹربیونل سروس نے ان پر پابندی کی درخواست دی، جس میں کہا گیا کہ اگرچہ جگر پر آٹوگراف سے مریضوں کو کوئی جسمانی نقصان نہیں پہنچا، لیکن اس سےانہیں ذہنی صدمے کا سامنا کرنا پڑا۔
میڈیکل پریکٹیشنرز ٹربیونل کے اس مؤقف کے بعد سائمن کی معافی کی اپیل مسترد کر دی گئی اور تمام خدمات کے باوجود ان کا میڈیکل لائسنس منسوخ کر دیا گیا اور انہیں فوری طور پر برطرف کر دیا گیا۔ 
تاہم عدالت کا کہنا ہے کہ وہ 28 دنوں کے اندر اپیل کر سکتے ہیں۔


APNN نیوز، APNN گروپ یا اس کی ادارتی پالیسی کا اس تحریر کے مندرجات سے متفق ہونا ضروری نہیں ہے۔

APNN News, the APNN Group or its editorial policy does not necessarily agree with the contents of this article.


عوامی بحث (0) تبصرے دیکھنے کے لئے کلک کریں Public discussion (0) Click to view comments
28 / 5 / 2021
Monday
1 : 23 : 31 PM