ارضِ پاک نیوز نیٹ ورک

Arz-e-Pakistan News Network

Language:

Search

Prime Minister’s special aide Jamshed Cheema backs Qalandar Badshah.    "نیوزی لینڈ میں اتنی فورسز نہیں ہوں گی جتنی انہیں یہاں سیکیورٹی فراہم کی گئی".    Director General Punjab Emergency Department Regularized Services of 103 Rescuers.    CEO Vscopk Mian Afzal Javed distributes shields to participants.    "مشترکہ مقصد2021ء "کا انعقاد.    Awareness seminar against sexual harassment and violence against women organized by Lahore Police.    Police Challan shows involvement of Zahir Jaffer's father in the murder of Noor Mukadam.    Here’s Pak Boon, an elephant at the Taronga Zoo Sydney, enjoying a mud bath in the Australian sun.    Pakistan urges world to recognise new reality in Afghanistan.    CCPO Directs Officers to Conduct Surprise Visits of Police Stations.    SPA CEYLON outlet now in Lahore.    VALIENT PUNJAB RANGERS IN 65 WAR.   

جعلی ویکسی نیشن سرٹیفیکیٹ بنا کر پیسے بٹورنے والا گروہ بے نقاب

Syed Asad Ali
09 Sep, 2021

09 ستمبر ، 2021

Syed Asad Ali
09 Sep, 2021

09 ستمبر ، 2021

جعلی ویکسی نیشن سرٹیفیکیٹ بنا کر پیسے بٹورنے والا گروہ بے نقاب

post-title

لودھراں: محکمہ ہیلتھ اور خفیہ ایجنسیوں کی بڑی کاروائی کروناویکسین لگائے بغیر لوگوں کو کرونا ویکسینیشن کی بوگس انٹریاں ڈالنے  والا گروپ پکڑ لیا گیا۔ گروپ میں ابتدائی طور پر تین افراد کو پکڑا گیا ہے، جن میں لودہراں کے رہائشی  آفتاب ،شہزاد،اویس شامل ہیں جو آون لائینز ویکسینیشن کر رہے تھے۔ ان کے قبضہ سے کمپیوٹر، لیپ ٹاپ، ڈیٹا انٹری سسٹم  اور دیگر اشیا برآمد کرلی گئی ہیں۔ تمام کام ایک موبائل شاپ میں ہو رہا تھا جس میں ملک سے باہر جانے والے افراد کو ویکسینیشن کا ڈیٹا پانچ ہزار روپے میں بنا کے دیا جارہا تھا جبکہ ملک میں رہنے والے افراد کو پندرہ سو سے دو ہزار روپے میں ڈیٹا بنا کر دیا جارہا تھا۔
 پوری دنیا میں جہاں عوام کورونا وائرس سے پریشان ہے اور اس کی روک تھام کے لیے دن رات محنت کی جا رہی ہے تو دوسری طرف لودھراں کے سٹی ایریا میں اس انٹرنیشنل کمپین کو ناکام بنانے کے لیے تین رکنی گروہ مبینہ طور پر ملتان اور مظفر گڑھ کے ہیلتھ آفس کے پاس ورڈ لگا کر عوام کو  بوگس ویکسینیشن کی کنفرمیشن جاری کر رہا تھا  جس کے بعد ان لوگوں کا ڈیٹا گورنمنٹ محکمہ ہیلتھ کی طرف سے جاری ہو جاتا اور ان لوگوں کو نادرا آفس یا نادرا کی مقرر کردہ شاپ سے ویکسین لگنے کا کارڈ آسانی سے جاری ہو جاتا ہے۔ اس انٹرنیشنل کمپین کو یہ گروہ ناکام بنانے میں مصروف عمل تھا۔ 
اس پروگرام کے پیچھے مزید کون  لوگ کام کر رہے ہیں اور اس میں محکمہ ہیلتھ لودہراں کے بھی کوئی ملازمین شامل ہیں وہ انکشافات تفتیش کے بعد سامنے آئیں گے۔  ڈسٹرکٹ ہیلتھ آفیسر ڈاکٹر سجاد نے خفیہ ایجنسیوں اور اپنے ٹیم کے ذریعے ان افراد کا سراغ لگایا اور اس گروپ کے تین افراد کو گرفتار کروادیا ۔ 
تفتیش مکمل کرنے کے بعد مزید نام سامنے آئیں گے اب اس کارروائی کے بعد گورنمنٹ آف پاکستان وفاقی و صوبائی سیکرٹری ہیلتھ کو نوٹس لینا چاہیے کہ وہ  اس سارے واقعے کی چھان بین کریں اور ان کے اصل محرکات کو گرفتار کریں کیوں کہ ایسی صورتحال میں انٹرنیشنل لیول پر یہ لوگ ہمارے ملک کی بدنامی کا سبب بن رہے ہیں اور دن رات گورنمنٹ پاکستان کی محنت کے باوجود وائرس ختم ہونے کا نام نہیں لے رہا ۔ 
یہ گروپ تو لودھراں کی حد تک پکڑا گیا ھے اب پورے پاکستان میں اس کی کیا صورتحال ھے اور اس طرح سے جعلی اور بوگس انٹری کن کن شہروں میں کی جا رہے ہیں اس کی تفصیلات چھان بین کے بعد سامنے آئیں گی  ذرائع سے معلوم ہوا  ہے کہ جن لوگوں کو اس گروپ نے کنفرمیشن جاری کی ھے  ان کا ڈیٹا بھی اکٹھا کیا جا رہا ہے اور اس پر بھی مزید کیا کاروائی کی جاتی ہے وہ بھی وقت کے ساتھ ساتھ معلوم ہو سکے گی۔
 


APNN نیوز، APNN گروپ یا اس کی ادارتی پالیسی کا اس تحریر کے مندرجات سے متفق ہونا ضروری نہیں ہے۔

APNN News, the APNN Group or its editorial policy does not necessarily agree with the contents of this article.


عوامی بحث (0) تبصرے دیکھنے کے لئے کلک کریں Public discussion (0) Click to view comments
28 / 5 / 2021
Monday
1 : 23 : 31 PM