ارضِ پاک نیوز نیٹ ورک

Arz-e-Pakistan News Network

Language:

Search

UET لاہور انڈرگریجویٹ داخلہ فارم جمع کرانے کی آخری تاریخ.    Major progress in Lahore Police Anti-Drug Campaign.    "میرا ڈونا بلیسڈ ڈریم "کا پہلا ٹریلر جاری.    "پاکستان ممکنہ بھارتی جارحیت کا دفاع کرنے کے لیے تیار ہے".    Paperless driving license system is going to be introduced in Punjab.    Foolproof Security on the eve of Urs of Data Ali Hajveri (RA) and Chehlum of Hazrat Imam Hussain (AS).    "سب کو بتانا مرشد آئے تھے، "عثمان مرزا کے تیور نہ بدلے.    "اپنے لیے اپنے ملک کیلیے ویکسین لگوائیں"،شیخ رشید کی قوم سے اپیل.    MoU signed between Punjab Hepatitis Control Program, Ferozsons Laboratories Limited and Inspectorate of Prisons.    Pakistan and Austria FMs meet in New York.    Prime Minister’s special aide Jamshed Cheema backs Qalandar Badshah.    "نیوزی لینڈ میں اتنی فورسز نہیں ہوں گی جتنی انہیں یہاں سیکیورٹی فراہم کی گئی".    Director General Punjab Emergency Department Regularized Services of 103 Rescuers.    CEO Vscopk Mian Afzal Javed distributes shields to participants.   

 خواتین کے ساتھ جنسی ہراسگی اور تشدد کے خلاف آگاہی مہم

ویب ڈیسک
04 Sep, 2021

04 ستمبر ، 2021

ویب ڈیسک
04 Sep, 2021

04 ستمبر ، 2021

 خواتین کے ساتھ جنسی ہراسگی اور تشدد کے خلاف آگاہی مہم

post-title

لاہور: پولیس کی خواتین کے ساتھ جنسی ہراسگی اور تشدد کے خلاف آگاہی مہم ۔
سی سی پی او غلام محمود ڈوگر کی قیادت میں تمام شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والی خواتین کی واک ۔آگاہی واک میں،خواتین اساتذہ،طالبات،ورکنگ وویمن، سول سوسائٹی، پولیس افسران و اہلکاروں کی بھرپور شرکت ۔
سی سی پی او غلام محمود ڈوگر کا کہنا تھا ریاست اور پولیس جنسی ہراسگی اور تشدد کا شکار خواتین کے ساتھ ہیں، ملزمان کو کیفر کردار تک پہنچائیں گے۔ سربراہ لاہور پولیس ایڈیشنل آئی جی غلام محمود ڈوگر نے مزید کہا ہے خواتین کا تقدس مجروح کرنے والےشیطان صفت عناصر کو کیفرکردار تک پہنچائیں گے۔
خواتین کو ہراساں کرنے اور دست درازی کے واقعات کی روک تھام کے لیے جاری لاہور پولیس کی آگاہی مہم کے تسلسل میں آج لبرٹی چوک میں سی سی پی او غلام محمود ڈوگر کی قیادت میں وویمن سیفٹی آگاہی واک کا انعقاد کیا گیا۔ڈویژنل ایس پیز،اے ایس پی بشرٰ نثار اور ایس ڈی پی او اوز کے علاوہ خواتین پولیس افسران اور لیڈیز ٹریفک پولیس اہلکاروں سمیت سول سوسائٹی سے تعلق رکھنے والی خواتین،اساتذہ اور کالجز یونیورسٹیوں کی طالبات اور ورکنگ وویمن نے بڑی تعداد میں واک میں شرکت کی۔
سربراہ لاہور پولیس غلام محمود ڈوگر نے میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ واک کا مقصد آئی جی پنجاب کے ویژن کے مطابق خواتین کو تحفظ فراہم کرنے کے لئے ویمن سیفٹی ایپ سے متعلق آگاہی فراہم کرنا اور خواتین کے ساتھ ہراسگی کے واقعات کے تدارک کے لئے معاشرے کے تمام طبقات کا شعور اجاگر کرنا ہے۔انہوں نے کہا کہ خواتین اپنے ساتھ ہونے والے کسی بھی ناخوشگوار واقعہ سے متعلق ویمن سیفٹی ایپ پر شکایت درج کروا سکتی ہیں۔ایپ میں رجسٹر ہونے والی درخواستوں پر فوری کاروائی عمل میں لائی جارہی ہے۔انہوں نے کہا کہ گذشتہ چند روز کے دوران ستر ہزار سے زائد خواتین پنجاب پولیس کی ویمن سیفٹی ایپ کو ڈاؤن لوڈ کر چکی ہیں۔اس جدید ایپ کے ذریعے خواتین کے ساتھ بدسلوکی اور جنسی ہراسگی کے واقعات میں ملوث ملزمان کے خلاف فوری ایکشن یقینی بنایا جائے گا۔
سی سی پی او لاہور نے مزید کہا کہ لاہور پولیس خواتین کو تحفظ دینے کی ہر ممکن کوشش کررہی ہے۔خواتین سے متعلقہ جرائم کی روک تھام کےلئے شہر کے مختلف مقامات پر ”اینٹی ویمن ہراسمنٹ اینڈ وائیلنس سیل“ قائم کئے جارہے ہیں۔اینٹی ویمن ہراسمنٹ اینڈ وائیلنس سیلز کے قیام کا مقصد خواتین کے ساتھ جرائم کی روک تھام،صنفی جرائم کے ہر واقعہ میں بلاتاخیر مقدمات کا اندراج ،میرٹ پر مقدمات کی تفتیش جبکہ ایسے جرائم میں ملوث ملزمان بالخصوص خطرناک عادی مجرمان کوعدالتوں کے ذریعے قرار واقعی سزاؤں کو یقینی بناناہے۔ سی سی پی او لاہور نے مزید کہا کہ "خصوصی سیل"میں خواتین پولیس اہلکاروں کا سپیشلائزڈ یونٹ وکٹم سپورٹ آفیسرز کی حیثیت سےفرائض سر انجام دے گا۔خاتون وکٹم سپورٹ آفیسرز متاثرہ خواتین کی ایف آئی آر کے بروقت اندراج،میڈیکل،تفتیش کی تکمیل اور مقدمہ کی عدالت میں پیروی سمیت کیس سے متعلقہ تمام معاملات میں بھرپور معاونت یقینی بنائیں گی۔
 غلام محمود ڈوگر نے کہا کہ ”اینٹی ویمن ہراسمنٹ اینڈ وائیلنس سیلز“ میں خواتین کی جانب سے موصول ہونے والی جرائم کی کالز پر 15منٹ میں رسپانس کو یقینی بنایا جائے گا جبکہ کیس کے بارے میں متاثرہ خاتون سے فیڈ بیک بھی لیا جائے گا۔لاہور میں پہلا ”اینٹی ویمن ہراسمنٹ اینڈ وائیلنس سیل “ ڈیفنس بی جبکہ دوسرا لبرٹی گلبرگ کے علاقہ میں قائم کیا جارہا ہے۔غلام محمود ڈوگر نے خواتین کمیونٹی سے اپیل کی ہے کہ کسی بھی جنسی ہراسگی اور تشدد کی صورت میں  متاثرہ خواتین اپنے خلاف ہونے والے مجرمانہ اقدام سے محفوظ رہنے اور فوری پولیس مدد یقینی بنانے کے لئے پولیس سیفٹی ایپ اپنے موبائل میں لازمی ڈاون لوڈ کریں تاکہ انہیں بروقت پولیس تحفظ کی فراہمی یقینی بنائی جا سکے۔
 


APNN نیوز، APNN گروپ یا اس کی ادارتی پالیسی کا اس تحریر کے مندرجات سے متفق ہونا ضروری نہیں ہے۔

APNN News, the APNN Group or its editorial policy does not necessarily agree with the contents of this article.


عوامی بحث (0) تبصرے دیکھنے کے لئے کلک کریں Public discussion (0) Click to view comments
28 / 5 / 2021
Monday
1 : 23 : 31 PM