ارضِ پاک نیوز نیٹ ورک

Arz-e-Pakistan News Network

Language:

Search

Prime Minister’s special aide Jamshed Cheema backs Qalandar Badshah.    "نیوزی لینڈ میں اتنی فورسز نہیں ہوں گی جتنی انہیں یہاں سیکیورٹی فراہم کی گئی".    Director General Punjab Emergency Department Regularized Services of 103 Rescuers.    CEO Vscopk Mian Afzal Javed distributes shields to participants.    "مشترکہ مقصد2021ء "کا انعقاد.    Awareness seminar against sexual harassment and violence against women organized by Lahore Police.    Police Challan shows involvement of Zahir Jaffer's father in the murder of Noor Mukadam.    Here’s Pak Boon, an elephant at the Taronga Zoo Sydney, enjoying a mud bath in the Australian sun.    Pakistan urges world to recognise new reality in Afghanistan.    CCPO Directs Officers to Conduct Surprise Visits of Police Stations.    SPA CEYLON outlet now in Lahore.    VALIENT PUNJAB RANGERS IN 65 WAR.   

گورکن کی کہانی 

وجاہت اختر
08 Sep, 2021

08 ستمبر ، 2021

وجاہت اختر
08 Sep, 2021

08 ستمبر ، 2021

گورکن کی کہانی 

گرمی میں دو پہر کاوقت ہے اور گورکن قبر کھود رہا ہے اور آ نکھیں نم ہیں ،سچائی کے مطابق گورکن اپنے دن کی کمائی کا آغاز کر رہا ہے  لیکن کیسے معلوم تھا یہ کمائی اس کی کسی خبر آنے تک بھی پہنچادے تو اس کی آنکھیں مزید زا ر و قطار روئیں گی۔بات اگر شروع ہوئی ہے تو ا ختتام سے شروع کرتے ہوئے ا بتداء کی جانب چلتے ہیں ۔
کیسی قدرت ہے پہلے انسان بنایا پھر اس کی ضرورتوں کو لازم کیا اور جب ضرورت پوری ہوتی ہوئی دیکھائی د ی تو نصیب آ گیا۔یہ نصیب ایک انسان کا نہیں بلکہ زندگیوں کے نصیب کی بات ہے ، وہ والد جس کو مجازی خدا کہا جاتا ہے جو اپنی اولاد کی خوشیوں اور ضروریات کو پورا کرنے کےلیئے جتن و محنت کررہا ہے لیکن قسمت کا کھیل پیسے کے بغیر انسان کی حیثیت ایک شاپر جیسی ہے ، جس طرف ہوا کا رخ ، اس طرف اس کا رخ ، کبھی کسی کے پائوں میں تو کبھی کسی کے پا ئوں میں۔یہ قبر جو کھودی جا رہی ہے یہ حالات کے مارے اس باپ  کے داماد کی ہے جس کا نکاح گورکن کی بیٹی سے ہوا تھا۔کیا خوب کہنا ہے کسی کا ۔۔۔قسمت کا کو ئی ا عتبا ر نہیں ۔ ا گر قسمت کی بےوفائی کی بات کرے تو گورکن کھبی اپنی غریبی میں خوشحال ہوا کرتا تھا۔قسمت کا کھیل دیکھے قبر سے گھر کا چولہا تو جل رہا تھا  لیکن وقت کا تقاضا اب بیٹی کی شادی تھی ۔گورکن اب خوش بھی تھا اور غمگین بھی ، ا للہ نے نعمت سے نوازا تھا اور اب اس کا فرض اداکرنا تھا۔ اب قسمت کا کھیل لڑکا بھی مل چکا تھا اب وقت نزدیک ہے حالات کچھ یوں بدلے گھر کا چولہا بھی مدہم ہوگیا۔اب گورکن ظالم حالات کی آنکھوں میں آنکھیں ڈال کے من ہی من میں بول رہا تھا کے کیسے کسی کے مرنے کی دعا کروں یا اللہ کوئی وسیلہ بنا میں تیری رضا میں راضی ہوں۔دعا عرش تک پہنچی اور اس رب نے اپنے بندے کے لیے وسیلہ ایک موزی بیماری کی صورت میں بنایا، گورکن کے گھر کا چولہا دوبارہ تیزہوا اور خوشحالی نے اس کے گھر کا رخ کیا۔لیکن بات وہی قسمت اور نصیب کی آ نکھ مچولی کب رکی ہے۔ کھبی نصیب دو قدم آگے اور کھبی قسمت دو قدم پیچھے ، لیکن جو اللہ کو منظور اس میں سرتسلیم خم۔  وقت اس طرح گزرا کے شادی کا دن آگیا۔مہمانوں کی آ مد اور خوشی غم کو مات دیتے ہوئے ، یہ منظر ابھی چل رہا تھاکہ گورکن کو خبر موصول ہوئی کے بہت ضروری قبر کھودنی ہے ۔ گورکن صاف انکار کرتے ہوئے بولا آج باپ اپنی بیٹی کی رخصتی کر رہاہے ،آج یہ گورکن نہیں ہے۔کہیں سے ایک آوازبلند ہوئی گورکن اللہ کو جو منظور تھا اس کو قبول کرو اور اپنے ہونے والے داماد کی قبر کھودو،یہ وقت گزرجائے اور صبر کی طرف رواںدواں ہوا جائے۔اس بات کا سنناتھا گورکن نم آنکھوں سے مسکرایا اور بولا،               

    اے رب میں تیری رضا میں راضی ہوں!
 


APNN نیوز، APNN گروپ یا اس کی ادارتی پالیسی کا اس تحریر کے مندرجات سے متفق ہونا ضروری نہیں ہے۔

APNN News, the APNN Group or its editorial policy does not necessarily agree with the contents of this article.


عوامی بحث (0) تبصرے دیکھنے کے لئے کلک کریں Public discussion (0) Click to view comments
28 / 5 / 2021
Monday
1 : 23 : 31 PM