آئی ایم ایف کو کہہ دیا ہے کہ ہم تنخواہ دار طبقے پر مزید بوجھ نہیں ڈالیں گے: وزیر خزانہ شوکت ترین

Thursday, June 10th, 2021, 04:50:45 PM

اسلام آباد: وفاقی وزیر خزانہ شوکت ترین نے جوبائیڈن انتظامیہ کو پاکستان کا پیغام پہنچاتے ہوئے کہا ہے کہ ہم امریکا سے پیسے نہیں بلکہ تجارت چاہتے ہیں۔ آئی ایم ایف کو کہہ دیا ہے کہ ہم تنخواہ دار طبقے پر مزید بوجھ نہیں ڈالیں گے، ہم اور ذرائع سے ریونیو بڑھائیں گے۔
اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ آئی ایم ایف کے ساتھ مذاکرات چل رہے ہیں، دونوں کی منزل ایک ہے، ہم غریب طبقے پر مزید بوجھ نہیں ڈالیں گے، عالمی مالیاتی ادارے کو ریونیو بڑھانے کیلئے متبادل پلان پیش کر دیا ہے۔شوکت ترین نے کہا کہ حکومتی پالیسیوں کے باعث معیشت مستحکم ہوئی، بیشتر اہداف حاصل کر لئے ہیں۔ روشن ڈیجیٹل اکانٹ میں ایک بلین ڈالر سے زائد ہو چکے ہیں۔ گیس بجلی، تعمیراتی اور زرعی شعبے میں مراعات دیں۔ اب مہنگائی کو روکنے کی کرکوشش کر رہے ہیں۔وزیر خزانہ شوکت ترین نے اقتصادی سروے جاری کرتے ہوئے کہا کہ کورونا وبا کی وجہ سے 2 کروڑ افراد بے روزگار ہوئے، تاہم ان میں سے بیشتر بحال ہو چکے ہیں۔ شوکت ترین کا کہنا تھا کہ ترسیلات زر میں ریکارڈ اضافہ ہوا، امید ہے ترسیلات زر 29 بلین ڈالر ہو جائیں گی۔ ترسیلات زر بڑھنا اوورسیز پاکستانیوں کا وزیراعظم پر اعتماد ہے۔ ترسیلات زر کی وجہ سے کرنٹ اکانٹ سرپلس چل رہا ہے جبکہ زرمبادلہ ذخائر 16 ارب ڈالر کیساتھ 4 سال کی بلند ترین سطح پر ہیں۔